بریکنگ نیوز:پرویز مشرف کو سزائے موت سنائے جانے کا فیصلہ : میجر جنرل آصف غفور کے رد عمل کے بعد چیف جسٹس آف پاکستان خود میدان میں آگئے ، سب کچھ واضح طور پر قوم کے سامنے رکھ دیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) سابق صدر پاکستان و سابق چیف آف آرمی سٹاف جنرل (ر) پرویز مشرف کے خلاف خصوصی عدالت کی جانب سے جو سزا سنائی گئی تھی اُس پر ساری دنیا میں بحث و مباحثہ جاری ہے جبکہ پاک فوج نے اپنے سابق سپہ سالار کے حق میں سامنے آ کر غم و غصہ کا اظہار کیا تھا۔

 اس پرپرویز مشرف کو سزائے موت سنائے جانے پر پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل آصف غفور کے رد عمل کے بعد رات گئے چیف جسٹس آف پاکستان کا اہم بیان بھی سامنے آگیا ۔ چیف جسٹس کے ذرائع نے خبر دی ہے کہ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس آصف سعید کھوسہ کے مطابق پرویز مشرف کا کیس واضح تھا ،انہیں دفاع کے لیے متعدد مواقع فراہم کیے گئے ،کیس کو طول دیا جا رہا تھا اگر ہم جلدی نہ کرتے تو معاملہ سالوں تک طول پکڑتا۔آرمی چیف کی مدت ملازمت سے متعلق انہوں نے کہا کہ جسٹس گلزار نے آرمی چیف کی مدت ملازمت کا کیس سننے سے معذرت کی ،آرمی چیف کی توسیع کا کیس میرٹ پر سنا اور فیصلہ دیا جس سے مستقبل میں تقرر کے معاملے کا ہمیشہ کے لیے تعین ہو ۔چیف جسٹس نے ایک کیس میں بڑی سرکاری پوزیشن دئیے جانے کا بھی ذکر کیا۔ شبہ تھا کہ جسٹس فائز کے خلاف ریفرنس فیض آباد دھرنے کا ہو گا لیکن ان کے خلاف معاملہ لندن جائیدادوں کا نکلا۔جسٹس آصف سعید کھوسہ نے بتا یا کہ جسٹس فائز سے کہا کہ اپنا ریکارڈ منگوا کر چیک کریں جبکہ فیض آباد دھرنا نظر ثانی کیس میں کہا کہ فیصلہ میرٹ پر دیں ،جسٹس فائز کو ادارے کی ساکھ سے متعلق بیانات دینے سے روکا ۔چیف جسٹس آف پاکستان نے مزید کہا کہ ممتاز قادری کے فیصلے کے بعد سیکیورٹی پیشکش سے انکار کیا تھا ۔

About newsbeads

Check Also

سونے کی قیمت میں فی تولہ حیرت انگیز کمی خریداروں کیلئے بڑی خبر

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) آخر کار عوام کی بھی کسی حد تک سُنی ہی گئی ہے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *